گوادر کی بند

41

گوادر کی بندرگاہ مشرق مغرب اورجنوبی ایشیا کو آپس میں جوڑے گی اور افریقی اور یورپی منڈیوں تک رسائی حاصل ہوگی ون بیلٹ ون روڈ منصوبہ آدھی دنیا کی معیشیتوں کےلئے کشش کا باعث ہے،وزیر اعظم کا بیجنگ میں گول میز کانفرنس سے خطاب
بیجنگٟمانیٹرنگ ڈیسکٞ وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ پاکستان پرامن ہمسائیگی اور باہمی رابطوں کی پالیسی پر گامزن ہے۔چین کے دارالحکومت بیجنگ میں منعقدہ بیلٹ روڈ فورم کی گول میز کانفرنس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف کا کہنا تھا کہ گوادر کی تعمیر و ترقی تیزی سے جاری ہے، گوادر کی بندرگاہ مشرق مغرب اورجنوبی ایشیا کو آپس میں جوڑے گی اور اس کے ذریعے افریقی اور یورپی منڈیوں تک رسائی حاصل ہوگی۔ ہم نے مختصر وقت میں سی پیک کے تحت منصوبوں پر کام کیا، یہ منصوبہ نئی سپلائی اور مواصلاتی زنجیر تخلیق کرے گا اور بہت جلد گوادر وسیع مواقع کا شہر بن جائے گا۔وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان پرامن ہمسائیگی و باہمی رابطوں کی پالیسی پر گامزن ہے اور مشترکہ، مساوی و جامع ترقی پر یقین رکھتا ہے، علاقائی تعاون سے ہی خطے میں کشیدگی اور تنازعات میں بھی کمی ہوگی جب کہ علاقائی اقتصادی تعاون موجودہ اور مستقبل کی نسلوں کو فائدہ پہنچائے گا۔ون بیلٹ ون روڈ کے منصوبے پر چین کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ یہ منصوبہ درحقیقت انسانیت کے نئے دور کا آغاز ہے، جس کے ذریعے غربت اورپسماندگی کے خاتمے میں مدد ملے گی، یہ منصوبہ غریب ملکوں کو امیر ممالک کے ساتھ جوڑے گا، ون بیلٹ ون روڈ منصوبہ آدھی دنیا کی معیشیتوں کےلئے کشش کا باعث ہے، یہ منصوبہ تعاون بڑھانے کے مواقع تلاش کرنے کا بہترین موقع ہے تاہم اس منصوبے کے علاوہ بھی ممالک اور اقوام کے ساتھ مذاکرات کی ضرورت ہے، ہمیں طویل مدتی تعاون کےلئے جامع حکمت عملی اپنانے کی ضرورت ہے، ایشیائی انفراسٹرکچر بینک اور بریٹن ووڈز انسٹی ٹیوشن باہمی تعاون کو بڑھانے میں کردار ادا کریں۔وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبوں کے آغازسے خطے اورقومیں ایک دوسرے سے جڑ گئی ہیں، اقتصادی تعاون میں اضافہ، علاقائی کشیدگی اورتنازعات میں کمی ہوگی۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ون بیلٹ روڈ طویل المدت ترقی اورروابط کے فروغ کے لیے اہم اقدام ہے،ریلوے، شاہراہوں، بندرگاہوں اورہوائی اڈوں کی تعمیر سے معاشی انقلاب آئےگا۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ ون بیلٹ ون روڈ سے خطے کے غریب ممالک کومواقع حاصل ہوں گے۔ ایشیا اور افریقا میں بنیادی ڈھانچے اورصنعتی تعاون پرپہلے ہی کام شروع ہوچکا ہے۔ نواز شریف

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.