48گھنٹوں میں اگلے لائحہ عمل کا اعلان کرونگا، مصطفی کمال

58

48گھنٹوں میں اگلے لائحہ عمل کا اعلان کرونگا، مصطفی کمال
پاکستان کی تمام سیاسی،مذہبی سماجی تنظیموں نے اظہار یکجہتی کیا، شکر گزار ہیں اب وہ وقت آگیا ہے حکمرانوں کو لڑکھڑا کر گر جانا ہےٴمیڈیاسے گفتگو
کراچیٟبیورورپورٹٞپاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی کی خواتین، بزرگوں بچوں اور نوجوانوں کو سلام پیش کرتا ہوں، تم لوگ سرخرو ہو گئے ہو، ہمارے عزم و حوصلہ نے ظالموں جابروں کو خوف میں مبتلا کردیا، ریلی چلنے سے پہلے ایوانوں میں لرزا طاری ہوچکا تھا،ِ اپنے مطالبات سے ہرگز پیچھے نہیں ہٹیں گے اور48 گھنٹوں میں اگلے لائحہ عمل کا اعلان کرونگااور اگر ہمارے مطالبات مان لیے گئے تو احتجاج ختم کردینگے۔،ہم نے صبر و ہمت مظاہرہ کیا کسی بھی سرکاری اور نجی املاک کو نقصان نہیں پہنچایا اور اپنے سینوں پر شیل کھاتے رہے اور اس مشکل وقت میں بھی پر امن رہنا ہی پاک سرزمین پارٹی کے کارکنان کا سب سے بڑا ہتھیار ہے ان خیالات اظہار سید مصطفی کمال نے کلا کوٹ تھانے سے غیر قانونی جبری گرفتار کے بعد رہائی ملنے پر پاک سرزمین پارٹی کے رہنما¶ں کے ہمراہ پاکستان ہا¶س میں رات کے آخری پہر ایک پرہجوم پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، سید مصطفی کمال نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت خالص ہے نہ آمریت، صرف پاکستان سرزمین پارٹی ہی خالص جماعت ہے جس میں کردار والے لوگ شامل ہیں جنہیں ڈیل کر کے مقصد سے نہیں ہٹایا جاسکتا، جو لوگوں کی مجبوری کی وہ سے نہ نکل سکے اور گھروں میں بیٹھ کر دعائیں کیں ان ما¶ں بہنوں کو سلام پیش کرتا ہوں انہوں نے کہا کہ پانی مانگنے والوں پر ریاست کا ایسا ظلم و بربریت انسانیت سوز واقعہ ہے، بے غیرت حکمران اپنے ہی عوام کے پیسے پر ڈاکہ ڈالتے ہیں اور انہیں کو سپنے جبر و ظلم کا شکار بناتے ہیں، زرادی صاحب کی گورنمنٹ کرپٹ گورنمنٹ ہے، ابھی تو ہم ریڈ زون میں داخل ہی نہیں ہوئے نہ ہی ہم نے کوئی قانون توڑا تھا جو ہم پر دھاوا بولا گیا اب وہ وقت آگیا ہے حکمرانوں کو لڑکھڑا کر گر جانا یے، انہوں نے کہا کہ کراچی کے عوام بے پورے ملک کیلئے ایک نئی شمع روشن کی ہے اور اب حکمرانوں کے دن گنے جاچکے، اب تک ان کا واسطہ کردار والوں سے نہیں پڑا تھا۔ مصطفی کمال

– See more at: http://mashriqakhbar.com/18582-15.html#sthash.UX3rmX4W.dpuf

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.