بھارت سے مونگ پھلی کی درآمد پر پابندی عائد

18

 کراچی: قرنطینہ ڈپارٹمنٹ نے زرعی خطرات کے پیش نظر بھارت سے مونگ پھلی کی درآمد پر پابندی عائد کردی ہے۔

قرنطینہ ڈپارٹمنٹ کی جانب سے کسٹمز حکام کو ارسال کردہ مراسلے کے ذریعے مطلع کیا گیا ہے کہ بھارت سے درآمد ہونے والی مونگ پھلی میں Aspergillas flavus اور Sphaceloma spp نامی زرعی بیماریاں موجود ہیں جن سے پاکستان کی زراعت کو بھی خطرات لاحق ہیں۔

قرنطینہ ڈپارٹمنٹ نے لالہ انٹرپرائزز کراچی کی بھارت سے درآمد کی جانے والی لاکھوں روپے مالیت کی 54 ٹن سے زائد مونگ پھلی کی کھیپ کو واپس بھجوانے یا واپس نہ ہونے کی صورت میں تلف کرنے کے احکام جاری کردیے ہیں۔

دوسری جانب کسٹمز حکام نے قرنطینہ ڈپارٹمنٹ کے فیصلے پر عمل کرتے ہوئے بھارت سے درآمد کی جانے والے لاکھوں روپے مالیت کی مونگ پھلی کی کلیئرنس آج سے روک دی گئی جس سے مونگ پھلی کے درآمد کنندگان میں تشویش پھیل گئی ہے اور بھارت سے روانہ ہوچکی مونگ پھلی کے سودے خطرے میں پڑگئے ہیں۔

درآمد کنندگان کے مطابق چین سے مونگ پھلی کی درآمد پہلے ہی بند کی جا چکی ہے اور اب 3روز قبل بھارتی مونگ پھلی کے لیبارٹری ٹیسٹ کے بعد مونگ پھلی کے چھلکے میں بیماری کی موجودگی کو جواز بناکر بھارتی مونگ پھلی کی کلیئرنس بھی روک دی گئی ہے۔

ادھر جوڑیا بازار میں مونگ پھلی کے تاجروں کا کہنا ہے کہ بھارت سے مونگ پھلی کی درآمد سے مارکیٹ میں مونگ پھلی کی قیمتوں پر کوئی اثر نہیں پڑے گا، پاکستان میں سکھر اور پاراچنار کی مونگ پھلی وافر مقدار میں دستیاب ہے، بھارتی مونگ پھلی پاکستانی مونگ پھلی سے سستی ہونے کی وجہ سے درآمد کی جارہی تھی۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.