80 کروڑ غریب افراد کیلئے مختصر المیعاد ترجیحات غیر موثر

33

اسلام آباد : ورلڈ بینک، آئی ایم ایف اور جی 20 کے اجلاس سے قبل اقوام متحدہ نے ایک جاری رپورٹ میں خبردار کیا ہے کہ دنیا کے 80 کروڑ غریب افراد کی حالت انتہائی خطرناک صورت اختیار کرگئی ہے۔

’فائنسنگ فار ڈویلپمنٹ: پراگریس اینڈ پراسپیکٹس‘ 2018 کی سالانہ رپورٹ معیشیت سے متعلق عالمی ترقیاتی اہداف کے حوالے سے ہے، جس کے مطابق عالمی معیشت اعتدال کی جانب جارہی ہے، پائیدار سرمایہ کاری کی رفتار بھی بڑھ رہی ہے، لیکن اکثر سرمایہ کاری مختصر مدت کے لیے ہے اور عالمی برادری کی جانب سے پائیدار معیشیت قائم کرنے سے متعلق کیے گئے وعدے پورے نہیں ہوسکے۔

سماجی طور پر ذمہ دارانہ سرمایہ کاری میں اضافہ ہورہا ہے لیکن یہ مالیاتی نظام میں وسیع پیمانے پر تبدیلی کا حل نہیں، رپورٹ کے مطابق موجودہ نظام سے سرمایہ کاروں اور منصوبوں کے مینیجرز کو فائدہ ہوتا ہے، جو مختصر مدت منافعے کو ترجیح دیتے ہیں۔

اسی طرح پالیسی بنانے والے بھی کم عرصے کی سرمایہ کاری ہی کو توجہ دے رہے ہیں، لیکن ایسی پالیسی کی بھی قیمت چکانی پڑسکتی ہے، انفراسٹرکچر منصوبوں کو بھی مختصر مدت کی ترجیحات میں شامل کیا جاتا ہے، خواتین اور چھوٹے کاروبار اس مالیاتی نظام کا حصہ نہیں۔

اقوام متحدہ کے ادارے اقتصادی اور سماجی معاملات کے انڈر سیکریٹری لیو جینمن کا کہنا تھا کہ ‘کچھ علاقوں میں اچھی سمجھی جانے والی خبر کہ غریب افراد پیچھے رہ گئے ہیں، معیشیت کے لیے اصل خطرہ ہے، انہوں نے یہ بھی کہا کہ ‘لاپرواہی کرنے والوں کے لیے کوئی گنجائش نہیں’

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.