شہبازشریف دیگر صوبوں کے وزراءاعلیٰ کیلئے ایک رول ماڈل

55

سابق گورنر سٹیٹ بینک اور کتا ب ’گورننگ کی انگورن ایبل ‘کے مصنف ڈاکٹر عشرت حسین نے اپنی کتاب میں وزیراعلیٰ شہبازشریف کو ان کی حسن کارکردگی پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف آج کے دور میں جدید وژن رکھتے ہیں جو ہر روز نت نئی تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں ۔ وہ خود بھی بہت متحرک ہیں اور اپنی ٹیم کو بھی متحرک رکھتے ہیں۔ڈاکٹر عشرت حسین کی کتا ب کی رونمائی کی تقریب کے موقع پر شہبازشریف بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے ،اسی دوران گفتگو کرتے ہوئے سابق گورنر سٹیٹ بینک نے کتا ب پر روشی ڈالی ،انہوں نے اپنی اس کتاب میں وزیر اعلٰیٰ پنجاب شہباز شریف کی حکومتی امور میں بہترین کارکردگی کو خوب سراہا ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر عشرت حسین کا کہناتھا کہ گزشتہ روز میں نے پنجاب کے مختلف علاقوں کا سفر کیا اور اس دوران میں دیہاتوں کو کھلتے ہوئے اور بہت زیادہ ترقی یافتہ دیکھا۔انہوں نے کہا کہ جب بھی سرکاری افسران امیدوں کے مطابق کارکردگی دکھانے میں ناکام نظر آتے تو شہبازشریف فوری ان کو تبدیل کر دیتے ہیں ،ان کا کہناتھا کہ شہبازشریف دیگر صوبوں کے وزراءاعلیٰ کیلئے ایک رول ماڈل کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اپنے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعلٰیٰ پنجاب اپنی غیر معمولی صلاحیتوں، بروقت ڈلیورنس، متعدد کامیاب منصوبوں اور اصلاحات کی بدولت عوام کے دلوں پر راج کر رہے ہیں۔. وزیر اعلیٰ کی سر پرستی میں پنجاب نے دیگر صوبوں کے مقابلے میں بہت ترقی کی ہے۔اپنی نئی کتاب میں ڈاکٹر عشرت حسین نے تجزیہ پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شہبازشریف نے متعدد شعبوں میں اصلاحات کیں،کاروباری اداروں کی طرح پبلک سیکٹر میں جدت لے کر آئے ہیں۔ان کا کہناتھاکہ 2013ءکے جنرل الیکشن میں ن لیگ کی کامیابی میں بڑا کردار شہباز شریف کی نسبتا بہتر پرفارمنس کی مرہون منت ہے، جو انہوں نے 2008ءسے 2013ءکے دوران دی۔سابق گورنراسٹیٹ بینک نے مزید کہا کہ شہبازشریف عوامی خدمات، تعلیم،صحت، سڑکوں، انفرا اسٹرکچر ، پبلک ٹرانسپورٹ ، سولڈ ویسٹ مینجمنٹ اور حالیہ سالوں میں توانائی کے شعبے میں اصلاحات لے کر آئے۔ڈاکٹر عشرت حسین نے یہ بھی کہا کہ شہبازشریف نے ریکارڈ مدت میں توانائی کے منصوبے تعمیر کئے جنہیں چین اور ترکی کے لیڈرز نے سراہا ہے۔ان کا کہناتھاکہ شہبازشریف کے دور میں اربوں ڈالرز کی مالیت کے معاہدوں میں کرپشن کی انتہائی کم رپورٹس سامنے آئیں ، منصوبوں کو مکمل کرنے میں شہباز شریف ثابت قدم دکھائی دیئے ، اگرچہ ان کا انداز قیادت اداروں کو منظم کرنے سے زیادہ انفرادی شخصیت کو ابھارنے کا ہے۔سابق گورنر اسٹیٹ بینک نے یہ بھی کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے اس میں گڈ گورننس کے عناصر شامل کیے ، کارپوریشنز کے سیکریٹریز اور سربراہوں کا چناو ان کی ماضی کی پرفارمنس اور ساکھ کی بنیاد پر کیا گیا او رجہاں بھی توقعات سے کم پرفارمنس دکھائی دی انہیں بغیر کسی ہچکچاہٹ کے تبدیل کردیاگیا۔ڈاکٹر عشرت حسین نے مزید کہا کہ اساتذہ کی تعیناتی مکمل میرٹ پر کی گئی ، شفافیت کے لیے ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گا ، اور اس پر شہریوں کا فیڈ بیک لیاگیا شہباز شریف پرائیویٹ کاروباری اداروں کی طرح پبلک سیکٹر میں جدت لے کر آئے۔انہوں نے کہا کہ ان کی فیصلہ سازی اور تجزیوں میں ان کے وزرا ، سیاسی اتحادیوں اور سپورٹرز کا زیادہ عمل دخل نہیں ہے۔سابق گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب دوسرے صوبوں کے وزرائے اعلی کے لیے رول ماڈل بن کر ابھرے ، کئی حوالوں سے پنجاب حکومت کی پرفارمنس دوسرے صوبوں سے بہت آگے ہے ، جو مضبوط لیڈرشپ کی مثال ہوسکتی ہے ، لیکن اسے برقرار رکھنا اسی وقت ممکن ہوگا جب اداروں کے انفرااسٹرکچر مضبوط ہوں گے۔ جہاں تک سابق گورنر سٹیٹ بنک ڈاکٹر عشرت حسین کے ان خیالات کا تعلق ہے تو میاں شہاباز شریف کی اب تک کارکردگی کود بھی ان کے خیالات کی تائید کرتی لیکن یہ ایک خوش آئند امر ہے کہ بطور ماہر معاشیات و سماجیات ان کی جانب سے کسی بھی صوبے کے وزیر اعلی کے لئے اس طرح کے خیالات کا اظہار یقیناً انہیں ان کی کاشووں کو بہترین خراج پیش کای جانا ہے ۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.