ڈھلتی عمر کے ساتھ چہرے کی خوبصورتی کیسے برقرار رکھی جائے؟

36

 دبئی: ڈھلتی عمر کے ساتھ چہروں پر پڑنے والی بدنما جھریوں سے پریشان افراد جہاں خود اعتمادی میں کمی کا شکار ہوجاتے ہیں وہیں ڈپریشن جیسے مرض کا بھی آسان شکار بن جاتے ہیں جس کی وجہ سے وہ ان جھریوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے پیسے کا بے دریغ استعمال کرتے ہیں اور ناتجربہ کار کاسمیٹک سرجنز کے ہاتھوں نقصان اٹھا بیٹھتے ہیں۔

دبئی کے ماہر کاسمیٹک سرجن ڈاکٹر جنید خان نے اس پیچیدہ مسئلے کا آسان حل بتاتے ہوئے کہا کہ ڈھلتی عمر کے اثرات میں شدت لانے والے عوامل میں تناؤ، غذا، ورزش، ماحول اور جینیاتی عوامل شامل ہیں جس پر قابو پاکر ڈھلتی عمر کے اثرات سے محفوظ رہا جاسکتا ہے جب کہ جلد کی خوبصورتی میں اضافے کے لیے کیمیکل سے تیار کردہ پراڈکٹس سے فائدے کے بجائے نقصان کا زیادہ احتمال رہتا ہے۔

ڈاکٹر جنید خان کا کہنا تھا کہ ڈھلتی عمر کے اثرات نمایاں طور پر سب سے پہلے چہرے پر نظر آتے ہیں چنانچہ ایسے وقت میں ایک ایسے ٹریٹمنٹ کی ضرورت پڑتی ہے جس سے چہرے کی جھریاں بھی ختم ہوجائیں اور چہرہ صاف و شفاف ہوجائے چنانچہ لوگوں کی بڑی تعداد کاسمیٹک سرجری اور بوٹیکس ٹریٹمنٹ کرانے کی طرف راغب ہورہی ہے۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.