طالبان کیساتھ مذاکرات مکمل، امن کے امکانات میں اضافہ ہوا: زلمے خلیل زاد

15

دوحہ: افغان مفاہمتی عمل کیلئے امریکا کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے طالبان کے ساتھ مذاکرات کو مثبت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امن کے امکانات میں اضافہ ہوا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری اپنے اہم بیان میں زلمے خلیل زاد نے لکھا کہ طالبان کے ساتھ قطر میں مذاکرات کا دور مکمل ہو چکا ہے، ان مذاکرات سے امن کے امکانات میں اضافہ ہوا ہے۔ واضح ہو گیا ہے تمام فریق جنگ کا خاتمہ چاہتے ہیں۔

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

(1/4) Just finished a marathon round of talks with the Taliban in . The conditions for have improved. It’s clear all sides want to end the war. Despite ups and downs, we kept things on track and made real strides.

417 people are talking about this
زلمے خلیل زاد نے اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ افغانستان میں امن کے لیے چار مسائل پر اتفاق ضروری ہے جس میں انسداد دہشت گردی کی یقین دہانی، فوجی انخلا، مکمل جنگ بندی اور بین الافغان مذاکرات کا آغاز شامل ہیں۔

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

(1/4) Just finished a marathon round of talks with the Taliban in . The conditions for have improved. It’s clear all sides want to end the war. Despite ups and downs, we kept things on track and made real strides.

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

(2/4) Peace requires agreement on four issues: counter-terrorism assurances, troop withdrawal, intra-Afghan dialogue, and a comprehensive ceasefire. In January talks, we “agreed in principle” on these four elements. We’re now “agreed in draft” on the first two.

215 people are talking about this
انہوں نے لکھا کہ مذاکرات میں ہم انسداد دہشت گردی کی یقین دہانی اور فوجی انخلا کے ڈرافٹ پر متفق ہوئے ہیں۔ فوجی انخلا کی تاریخ اور انسداد دہشت گردی کے اقدام کا مسودہ طے کرنے کے بعد طالبان اور حکومت کے مذاکرات کی طرف بڑھیں گے۔

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

(2/4) Peace requires agreement on four issues: counter-terrorism assurances, troop withdrawal, intra-Afghan dialogue, and a comprehensive ceasefire. In January talks, we “agreed in principle” on these four elements. We’re now “agreed in draft” on the first two.

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

(3/4) When the agreement in draft about a withdrawal timeline and effective counterterrorism measures is finalized, the Taliban and other , including the government, will begin intra-Afghan negotiations on a political settlement and comprehensive ceasefire.

242 people are talking about this
اپنی ٹویٹ میں زلمے خلیل زاد نے کہا ہے کہ جب تک تمام نکات پر اتفاق نہیں ہو جاتا تب تک کوئی چیز حتمی نہیں ہے، ہم عنقریب دوبارہ ملیں گے۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.