وزیر خارجہ کی بھارت کو مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کی دعوت

18

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک مرتبہ پھر بھارت کو مذاکرات کی دعوت دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی حکومت بھارت کے ساتھ مذاکرات کے لیے تیار ہے۔

اسکائی نیوز کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں میزبان ڈومینک ویگھورن نے وزیر خارجہ سے سوال کیا کہ کیا پاکستان کشمیر کو آزاد کرانے کا ارادہ رکھتا ہے؟۔

اس موقع پر پروگرام ’ورلڈ ویو‘ کے میزبان نے کہا کہ کئی کشمیری پاکستان کی شرائط پر آزادی نہیں چاہتے جس پر پاکستانی وزیر خارجہ نے جواب دیا کہ ٹھیک ہے، اس پر رائے شماری کرا لیتے ہیں۔ لوگوں کو فیصلہ کرنے دیں۔ بھارت نے اقوام متحدہ کے ایجنڈے میں یہی وعدہ کیا ہے۔ لوگوں کو حق خود ارادیت دیا جائے اور پھر وہ جو بھی فیصلہ کریں گے، پاکستان اسے قبول کرے گا۔

ایک سوال کے جواب میں شاہ محمود قریشی نے بھارتی قیادت کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے پروگرام کے توسط سے میں بھارت کو یہ پیغام دیتا ہوں کہ آئیے بیٹھیے اور بات کیجیے۔ میں تیار ہوں۔ کیا وہ تیار ہیں؟۔

’ہر کسی کو یہ سمجھنا ہو گا کہ افغانستان بدل چکا ہے‘

پروگرام کے میزبان نے افغان امن عمل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے پوچھا کہ موجودہ صورتحال میں آپ کیا توقع رکھتے ہیں کہ آگے کیا ہو گا؟ ’جب طالبان اقتدار میں آئیں گے تو کیا وہ القاعدہ کی حمایت کریں گے؟‘۔

 

شاہ محمود قریشی نے اس رائے سے اختلاف کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایسا نہیں سمجھتے، ایسا کرنا ان کے مفاد میں نہیں، وہ ذہین لوگ ہیں اور اپنے ملک کو دوبارہ سے بنانا چاہتے ہیں۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.