صدر مملکت کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب

47

**اسلام آباد: پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس جاری ہے، جہاں صدر مملکت ممنون حسین خطاب کر رہے ہیں۔

اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیر صدارت ہونے والے مشترکہ اجلاس میں وزیراعظم نواز شریف، مسلح افواج کے سربراہان، وزراء اعلیٰ، گورنرز اور سفارت کار بھی مہمانوں کی گیلری میں موجود ہیں۔

صدر مملکت ایوان سے خطاب کرتے ہوئے—۔ڈان نیوز
صدر مملکت ایوان سے خطاب کرتے ہوئے—۔ڈان نیوز
صدر مملکت ممنون حسین موجودہ پارلیمنٹ سے چوتھی بار خطاب کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ آئین کے آرٹیکل 56 کے تحت نئے پارلیمانی سال کا آغاز 17 مارچ کو ہوتا ہے اور صدر مملکت کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب روایتی آئینی ضرورت ہے، گزشتہ برس صدر نے 4 جون کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا تھا۔

ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے صدر مملکت کا کہنا تھا، ‘پاکستانی جمہوریت نے بڑے نشیب و فراز دیکھے ہیں، جس کے نتیجے میں پارلیمنٹ کا حقیقی مقاصد کے حصول کی طرف سفر جاری ہے’۔

صدر ممنون حسین کا کہنا تھا ‘میں توقع کرتا ہوں کہ معاشرے کا ہر طبقہ اپنے مفادات سے بالاتر ہو کر کام جاری رکھے گا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘قوم کے مختلف طبقات کے درمیان اختلاف رائے کا پیدا ہونا کوئی غیر معمولی بات نہیں، لیکن اسے انتشار میں بدلنے کا راستہ پوری حکمت عملی کے ساتھ بند کردیا جائے تاکہ ملکی ترقی کو روکنے کا عمل ناکام بنایا جاسکے’۔

انھوں نے بتایا کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ترقیاتی اخراجات میں 3 گنا اضافہ کردیا گیا ہے اور ہمیں ان معاملات پر مزید نظر رکھنی ہوگی۔

صدر کا خطاب شروع ہوتے ہی ایوان میں اپوزیشن نے ‘گو نواز گو’ کے نعرے لگادینے شروع کردیئے۔

غیرملکی سفیروں اور مسلح افواج کے سربراہان کی شرکت کے باعث پارلیمنٹ ہاؤس کی سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔

دوسری جانب اپوزیشن جماعتوں نے مشترکہ اجلاس کے موقع پر حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا منصوبہ بنا رکھا ہے۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.