سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کو آج طلب کر لیا

55

نہال ہاشمی کے بیان کی وجہ سے ان کی سینیٹ اور پارٹی عہدے سے چھٹی کر دی گئی ، جبکہ چیف جسٹس پاکستان نے ان کے بیان کا نوٹس لیتے ہوئے انہیں آج عدالت طلب کرلیا ۔اپوزیشن بھی شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے آج پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے صدر کے خطاب کے موقع پر احتجاج کا عندیہ بھی دے دیاہے۔

مسلم لیگ ن کےرہنمانہال ہاشمی کو پاناما جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینا بھاری پڑ گیا۔ وزیراعظم نے نہال ہاشمی سے سینیٹ اور پارٹی عہدے سے استعفا لے لیا۔سپریم کورٹ نے بھی بیان کا نوٹس لے لیا اور آج عدالت طلب کر لیا ۔

میاں نوازشریف نےنہال ہاشمی کوطلب تو کیالیکن ملاقات نہ کی، وزیراعظم ہاؤس میں پارٹی ترجمان ڈاکٹر آصف کرمانی نےنہال ہاشمی سےملاقات کی اورانہیں شوکاز نوٹس بھی تھما دیا، ساتھ ہی وزیراعظم کی سخت ناراضی اور تنبیہہ کا پیغام بھی دیا۔

پارٹی ترجمان نے ناصرف ان کی غلطی ہوگئی والی وضاحت مسترد کرکے پارٹی رکنیت فوری معطل کردی، بلکہ وزیراعظم کی ہدایت کے مطابق نہال ہاشمی نےڈاکٹرآصف کرمانی کے ساتھ جاکر سینیٹ آفس میں استعفا جمع کرادیا، جس میں لکھا کہ وہ ناگزیر وجوہات پر استعفا دے رہے ہیں، فوری منظور کیا جائے۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.