اسٹیٹ بینک کا بھی پیرڈائز لیکس میں آنیوالے پاکستانیوں کیخلاف کارروائی کا اعلان

11

مرکزی بینک نے بھی پیراڈائز لیکس میں نام آنے والے پاکستانیوں کے خلاف کارروائی کا اعلان کردیا۔

آئی سی آئی جی کی جانب سے جاری پیراڈائز لیکس نے پاکستان سمیت دنیا بھر میں ایک بار پھر ہلچل مچادی ہے جس میں پاکستان کے سابق وزیراعظم شوکت عزیز کا بھی نام ہے جب کہ ان کے علاوہ دیگر پاکستانی شخصیات کے نام سامنے آئے ہیں۔

گزشتہ روز فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے پیراڈائز لیکس میں والے پاکستانیوں کے خلاف تحقیقات کا اعلان کیا۔

جیونیوز کےمطابق اسٹیٹ بینک نے بھی لیکس میں نام آنے والے پاکستانیوں کے خلاف کارروائی کا اعلان کردیا ہے۔

نمائندہ جیونیوز کے مطابق گورنر اسٹیٹ بینک اشرف محمود وتھرا نے کہا ہے کہ پیراڈائر لیکس کی لمبی فہرست ہے جس کا جائزہ لیا جارہا ہے اور اس میں پاکستانیوں کے ناموں کا جائزہ لے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیراڈائز لیکس میں آنے والے پاکستانیوں کو نوٹس جاری کریں گے، جس پاکستانی کا بھی نام آیا اس کے خلاف تحقیقات کریں گے اور چیک کریں گے کہ سرمایہ کہاں سے آیا۔

گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ پیراڈائز لیکس میں 135 پاکستانیوں کے نام شامل ہیں، دیکھا جائے گاکہ وہ پاکستانی شہری ہیں یا نہیں، ان سے پوچھا جائے گاکہ جو سرمایہ کاری کی اس کے لیے کس طرح پیسہ باہر بھیجا، اس پیسے پر ٹیکس دیا گیا یا نہیں دیا گیا۔

اشرف وتھرا نے مزید کہا کہ ان افراد کے آمدن کے ذرائع مانگے جائیں گے اور اس کے لیے نوٹس کی صورت میں سوالنامہ بھیجا جائے گا، اگر ثابت ہوا کہ منی لانڈرنگ کے ذریعے پیسہ گیا تو ایسے افراد کے خلاف پاکستانی قوانین کے مطابق کارروائی کریں گے۔

واضح رہے کہ آئی سی آئی جے نے ہی پاناما پیپرز لیکس کا انکشاف کیا تھا جس میں شریف خاندان سمیت دیگر پاکستانی شخصیات کے نام سامنے آئے تھے۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.