بلوچستان میں سازش کے تحت جمہوری حکومت کو گرا یاگیا: محمود خان اچکزئی

33

کوئٹہ(آن لائن)پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہاہے کہ بلوچستان میں اےک سازش کے تحت جمہوری اور عوامی حکومت کو گرا دیا گےا 39ووٹ لینے والوں کو اقتدار حوالے کےا اور 40اراکےن کو ان کے پےچھے لگادیا گےا اس سازش کو بے نقاب کرنے کی وزےراعظم اور آرمی چیف سے اپےل کرتا ہوں افغانستان کے ساتھ بردرانہ تعلقات ہونے چاہیں پشتونوں کے قتل عام پر اب کسی بھی صورت خاموش نہیں رہیں گے ملک کو جمہوری انداز میں چلانا ہے تو ہم تاقےامت زندہ باد کہیں گے مگر جس طرح ملک کو چلاےا جارہاہے اس طرح نہیں چلنا چاہےے ان خےالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میںآل پختون قومی جرگے کے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کےا پشتونخوا ملی عوامی پارٹی سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا کہ ملک میں داخلہ اور خارجہ پالےسےوں پر نظر ثانی کی جائے ہمساےہ ممالک کے ساتھ تعلقات کو بہتر کےا جائے پشتونخوا وطن کو اےک سازش کے تحت تقسےم کےاگےا ہے ہم چاہتے ہیں کہ سے پےک بن جائے مگر جب تک افغانستان کی آزادی کی ضمانت ہمساےہ ممالک نہیں دے سکتا تو سی پےک نہیں بنے گا ملک کو پرامن بنانے کےلئے عملی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں اےک سازش کے تحت عوام کی منتخب کردہ حکومت کو گراےا گےا ہے جو کہ جمہوری رواےات کے منافی ہے وزےراعظم اور آرمی چیف سے اپےل کرتے ہیں کہ بلوچستان میں جمہوری حکومت گرانے کی سازش کو بے نقاب کریں انہوں نے کہاکہ افسوس اس بات پر ہے کہ 39ووٹ لینے والے وزےراعلیٰ کو اقتدار حوالے کےاگےا اور اس سے بلوچستان کے تقدےر کےسے بدلے گی بلوچستان کے پشتون اور بلوچ عوام کبھی بھی جمہوری نظام کے خلاف سازش کا حصہ نہیں بنے گے انہوں نے کہاکہ ہم جمہوری لوگ ہے جمہورےت پر ےقےن رکھتے ہیں انہوں نے کہاکہ پشتونخوا وطن میں جس طرح دہشت گردی کی اےک لہر شروع ہوئی اس میں اب تک ہزاروں لوگ شہےد ہوگئے اور نقےب محسود کے قتل میں ملوث ملزم کو فوری طور پر گرفتار کےا جائے انہوں نے کہا ہے کہ اگر واقعی ہمارے بچے کسی غلط کام میں ملوث ہے تو اس ملک میں آئین وقانون موجود ہے اور آئین وقانون کو مد نظر رکھتے ہوئے عدالتو ں میں پیش کیا جائے اگر واقعی کوئی جرم ثابت ہوں تو پھر ان کو سزا دینے کا حق ہے مگر اس طرح اٹھانا اور جعلی مقابلے میں کسی بھی پشتون کو مارنا یہ حق کسی کو نہیں ہے یہ ملک ہمارا ہے اور اس ملک کو چلانے میں سب کو اپنا کردا راد اکر نا ہو گا مگر اس طرح یہ ملک نہیں چلے گا جس طرح لو گ چلا رہے ہیں اگر ہمارے بچے محفوظ نہیں ہے تو پھر اگر کسی اور کے بچوں کیساتھ ہوا تو پھر اس پر ہم بھی کچھ نہیں کہیں گے انہوں نے کہا کہ آج پشتونخوا وطن میں لا کھوں لو گوں کو اپنے گھروں سے بے دخل کیا ہے اور جو دہشت گرد پکڑنے تھے وہ اب تک نہیں ہوئے مگر کچھ شر پسند عناصر کی وجہ سے لاکھوں پشتونوں کو نقل مکانی پر مجبور کر دیا جس کی وجہ سے ہمارے بچے بے دردی سے قتل ہو رہے ہیں انہوں نے کہا ہے کہ اس ملک کو حاصل کرنے کیلئے بہت بڑی قربانیاں دی ہیں پشتون جن علاقوں میں آباد ہے ان کو کسی نے خیرات میں نہیں دیا بلکہ وطن ننگ وناموس کے لئے بہت بڑی قربانیاں دی ہیں کسی سے خیرات وزکواة میں ہمیں وطن نہیں ملا بلکہ اس کے لئے پشتونوں نے بہت بڑی قربانیاں دی ہے انہوں نے کہا کہ ملک کو چلانے کا واحد طریقہ یہ ہے کہ جمہوری انداز سے چلایا جائے بحرانوں کا متحمل نہیں ہوسکتا اگرملک کو چلانا ہے تو صحیح معنوں میں آج سے جمہوری انداز میں چلایا جائے تو یہ ملک کچھ سالوں میں بہت ترقی کرے گا مگر جس طرح سے ملک کو چلایا جا رہا ہے یہ ملک چلانے کا طریقہ نہیں ہے آج بھی ہم کوشش کر رہے ہیں کہ اس ملک میں جمہوریت کو بچایا جائے اگر پھر بھی جمہوریت کو کوئی خطرہ ہوا تو پشتونخواملی عوامی پارٹی کسی بھی صورت غیر جمہوری اور غیرآئینی اقدام کی حمایت نہیں کرے گی انہوں نے کہا کہ پی سی او کے تحت حلف اٹھانے والے ججز کو بد ترین افراد قرار دینے کی قرارداد بھی منظور کی جائے آئین توڑنے والوں کیساتھ اب کوئی رعایت نہ کی جائے اور جن ججوں نے آئین کےساتھ وفاداری نہیں کی ہے ان کے ساتھ بھی وہی برتاﺅ کیا جائے جس طرح ماضی میں حکمرانوں کیساتھ ہو ا کر تا تھا انہوں نے کہا کہ ہماری بد قسمتی یہ ہے کہ یہاں کوئی بھی آئین توڑ کر جا سکتے ہیں ان سے کوئی نہیں پوچھتا آئین توڑنے والے شخص کی شہریت ختم کرنے کی قرارداد بھی منظور کیا جائے پشتونخواملی عوامی پارٹی اس ملک کو جمہوری انداز سے چلانے کے حق میں ہے اور جس طرح آج تمام ادارے نوازشریف کے خلاف ہے اس سے ہر گز ملک مضبوط نہیں ہوگا ہم جمہوری لوگ ہے اور جمہوری قوتوں کیساتھ ہے انہوں نے کہا کہ اب بھی وقت ہے کہ ملک کو حقیقی معنوں میں جمہوری انداز سے چلایا جائے تو ہم اس کی مکمل حمایت کریں گے انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں جو کچھ ہوا یہ طریقہ نہیں کہ جس کا مرضی ہوں وہ اس طرح اقدام اٹھائے اس سے کسی کو بھی فائدہ نہیں ہوگا بلکہ نفرتیں بڑھیں گے انہوں نے کہاکہ فاٹا کے فےصلے کے اختےار فاٹا کے عوام کو دیا جائے ہم جنگ کرنے والے نہیں پرامن اور محب وطن لوگ ہیں پشتونخوا وطن ہماری ماں ہے اور اس کو بری نظر سے دےکھنے والوں کی آنکھیں نکال دیں گے ہم نہ وحشی ہیں اور نہ دہشت گرد پشتونوں نے ہمےشہ تشدد سے نفرت کی ہے اور تارےخ اس بات کی گواہ ہے پشتونوں نے کھبی بھی تشدد کا راستہ اختےار نہیں کےا ہے ہمیں جو آزادی ملی ہے وہ کسی نے خےرات میں نہیں دی جو لوگ آج آزادی کی بات کررہے ہیں ہماری آکابرےن نے انگرےزوں کےخلاف بھی آزادی کی تحرےکیں چلائی ہیں اور جس میں کامےابی ہمیں ملی اور انگرےزوں کو شکست ہوئی ۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.