عدالتی حکم واپس، پرویز مشرف انتخابات میں حصہ نہیں لے سکتے

4,345

سپریم کورٹ نے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کو عام انتخابات میں حصہ لینے کا عبوری حکم واپس لے لیا۔

لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے پرویز مشرف کی واپسی سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران پرویز مشرف کی جگہ ان کے وکیل قمر افضل عدالت میں پیش ہوئے، جہاں انہوں نے عدالت کو بتایا کہ پرویز مشرف سے بات ہوئی ہے، انہوں نے عدالت میں پیش ہونے کے لیے مہلت مانگی ہے۔

 

پرویز مشرف کے وکیل نے بتایا کہ ان کے موکل پاکستان آنے کا ارادہ رکھتے ہیں لیکن عید کی تعطیلات اور موجودہ حالات کے پیش نظر سفر نہیں کر سکتے۔

اس موقع پر وکیل کی جانب سے استدعا کی گئی کہ پرویز مشرف کو پاکستان آنے کے لیے مہلت دی جائے، جس پر عدالت نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک کے لیے ملتوی کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ جب آپ کہیں گے تب کیس لگا دیں گے۔

ساتھ ہی عدالت نے پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی جمع کرانے سے متعلق دیا گیا عبوری حکم بھی واپس لے لیا۔

اس سے قبل سماعت کے دوران چیف جسٹس نے استفسار کیا تھا کہ پتہ کریں کہ پرویز مشرف آرہے ہیں یا نہیں؟

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے تھے کہ عید الفطر پر اسٹاف نے چھٹیوں پر جانا ہے، اس کیس کی سماعت دوپہر میں رکھی ہے، اگر پرویز مشرف نے آنا ہے تو انتظار کرلیتے ہیں۔

یاد رہے کہ 7 جون کو عدالت عظمیٰ نے نے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کی تاحیات نااہلی کےخلاف درخواست کی سماعت میں سابق صدر کو پاکستان واپس بلاتے ہوئے ان کے کاغذات نامزدگی بھی وصول کرنے کا حکم دیا تھا۔

 

چیف جسٹس نے کہا تھا کہ پرویز مشرف کاغذات نامزدگی جمع کروانے پاکستان آئیں تو انہیں گرفتار نہیں کیا جائے گا، ساتھ ہی انہیں یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ پرویز مشرف پاکستان تشریف لا کر کاغذات نامزدگی جمع کروائیں گے تو کاغذات وصول کرلیے جائیں گے۔

تاہم بعد ازاں گزشتہ روز کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے پرویز مشرف کو 14 جون تک وطن واپسی کی مہلت دیتے ہوئے کہا تھا کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف جمعرات تک آجائیں ورنہ قانون کے مطابق فیصلہ کردیں گے۔

چیف جسٹس ثاقت نثار نے ریمارکس دیئے تھے کہ سپریم کورٹ پرویز مشرف کی واپسی کے لیے ان کی شرائط کی پابند نہیں ہے، پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ پرویز مشرف وطن واپس آئیں، انہیں تحفظ دیں گے لیکن لکھ کر ضمانت دینے کے پابند نہیں۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.