پریانکا چوپڑا بھارت میں ووٹ دینے کے حق سے محروم

12

ممبئی: بھارتی شہر بریلی کی انتظامیہ نے پریانکا چوپڑا کانام ووٹر لسٹ سے خارج کردیا جس کے بعد پریانکابریلی میں حق رائے دہی سے محروم ہوگئی ہیں۔

پریانکا چوپڑا کا شمار بالی ووڈ کے ساتھ ہالی ووڈ کی بھی معروف اداکاراؤں میں ہوتا ہے۔ ہالی ووڈ میں کام کرنے کے باوجود پریانکا خود کو محب وطن شہری کہتی ہیں اور اکثر بھارت سے محبت کا مظاہرہ بھی کرتی رہتی ہیں۔ تاہم بھارتی حکومت پریانکا کے بارے میں ایسا نہیں سوچتی جب ہی تو ان کا نام ووٹر لسٹ سے خارج کرکے انہیں اور ان کی والدہ کوووٹ دینے کے حق سے محروم کردیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق پریانکا  چوپڑا  بھارتی شہر بریلی میں پیدا ہوئیں اور وہیں پلی بڑھیں ۔ تاہم 2000 میں مس ورلڈ کا تاج اپنے نام کرنے کے بعد پریانکا اور ان کا خاندان بریلی چھوڑ کر ممبئی میں آباد ہوگیا اور گزشتہ 17 سالوں سے وہیں مقیم ہے۔ بریلی کی انتظامیہ نے پریانکا اور ان کے گھر والوں کے نام ہی ووٹر لسٹ سے خارج کردیئے، جس کے بعد اب وہ بریلی میں ہونےو الے  بلدیاتی الیکشن میں حق رائے دہی استعمال نہیں کرسکیں گی۔

بریلی کے ضلعی مجسٹریٹ کیپٹن آر وکرم سنگھ نے پریانکااور ان کی والدہ مدھو چوپڑا کانام ووٹر لسٹ سے خارج کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں بلاک لیول آفیسر (بی ایل او)کی جانب سے اداکارہ اور ان کی والدہ کے نام لسٹ سے ہٹانے رپورٹ موصول ہوئی تھی ۔ رپورٹ  کے مطابق پریانکا کے مرحوم والد اشوک چوپڑا نے2012 میں ضلعی انتظامیہ کو آگاہ کردیا تھا کہ وہ اور ان کی فیملی ممبئی منتقل ہورہے ہیں۔ بریلی کی ووٹر لسٹ سے نام خارج کیے جانے پر فی الحال اداکارہ اور ان کی والدہ کی جانب سے کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

واضح رہے کہ پریانکا ان دنوں ممبئی میں بھی موجود نہیں ہیں بلکہ اپنے سیریل کوانٹیکو سیزن 3 کی شوٹنگ کے لیے گزشتہ کافی عرصے سے نیویارک میں مقیم ہیں۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.