اگر ہمارا سورج بلیک ہول میں چلا جائے تو کیا ہوگا؟

7

فلکیات میں بہت سی چیزیں ایسی ہیں جو انسان کو متجسس بنا دیتی ہیں لیکن کئی لوگ بلیک ہولز کے بارے میں سن کر بہت زیادہ حیران ہوجاتے ہیں، بلیک ہول ہر کہکشاں کے مرکز میں پائے جاتے ہیں لیکن سوال یہ ہے کہ ان بلیک ہولز کے اس کائنات میں موجود ہونے کی وجہ سے کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟ آخر یہ بلیک ہول پراسراریت سے بھرے کیوں ہیں؟

بلیک ہول کے گرد کہکشاں میں موجود تمام ستارے گردش کر رہے ہوتے ہیں، ہماری اپنی کہکشاں، جس کا نام ملکی وے ہے، کے مرکز میں ہمارے سورج سے تقریبا 10 لاکھ گنا بڑا بلیک ہول موجود ہے، جسے فلکیاتی اصطلاح میں “سپر میسِیو بلیک ہول” کہا جاتا ہے، اس کے گرد تقریبا 23 کروڑ ستارے گردش کررہے ہیں جن میں سے ایک ہمارا سورج بھی ہے، اگرچہ یہ سورج ہے، تاہم درحقیقت یہ ایک ستارہ ہی ہے!.

مگر بلیک ہول کے پاس اتنی طاقت کہاں سے آجاتی ہے؟ کیا یہ بھی کسی دوسری چیز سے انرجی حاصل کرتا ہے؟

درحقیقت بلیک ہولز کائنات کی سب سے چھپی ہوئی چیزوں میں سے ایک ہیں جن کو ڈھونڈھنا نہایت مشکل ہے، آج ہم ان کے بارے میں بہت کچھ جانتے ہوئے بھی کم ہی معلومات رکھتے ہیں، بلیک ہول کی مثال کچھ اس طرح سے ہے کہ اگر آپ اس نظام شمسی کے سورج کو ایک فٹ بال میں قید کردیں تو یہ سورج بلیک ہول بن جائے گا۔

مزید خبریں

اپنی رائے دیجئے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.