Mashriq Newspaper

معاشرے سے تشدداور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کوششیں کرنا ہونگی،اسپیکر بلوچستان اسمبلی

کوئٹہ(این این آئی)اسپیکر بلوچستان اسمبلی اور مذہبی رہنماوں نے کہا ہے کہ اسلام سمیت تمام مذاہب امن وبھائی چارے اورانسانیت کا درس دیتے ہیں ہمیں ملکر معاشرے سے تشدداور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کوششیں کرنا ہونگی ،پاکستان تمام مذاہب کے رہنے والوں کا ایک خوبصورت گلدستہ ہے جہاںہرعقیدے سے تعلق رکھنے والے افراد کوا پنی عبادات کرنے کی آزادی حاصل ہے۔یہ بات اسپیکر بلوچستان اسمبلی کیپٹن(ر) عبدالخالق اچکزئی، پی پی اے ایف کے سی ای او نادر گل ،بی آرایس پی کے سی ای او ڈاکٹر طاہررشید،بشپ خالد رحمت،قاری عبدالرشید ،ڈاکٹر آنند کمارنے بی آر ایس پی اورپی پی اے ایف کے اشتراک سے میتھوڈسٹ چرچ میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر رکن بلوچستان اسمبلی میرظہور بلیدی ،ڈاکٹر عطاءالرحمن ، علامہ ہاشم موسو ی،قاری حفیظ الرحمن ، فادر بشارت ،فادر سمیوئیل ،شیزان ویلم ،جسبیر سنگھ بھی موجود تھے۔اسپیکر نے امن اور افہام و تفہیم کیلئے مشترکہ کوششوں کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے ڈائیلاگ کم افطار ڈنر کے انعقادپر بی آر ایس پی، پی پی اے ایف اور میتھوڈسٹ چرچ کے کردار کو سراہا۔انہوں نے کہا کہ مختلف برادریوں کے درمیان اتحاد اور ہم آہنگی کو فروغ دینے میں اس طرح کے اقدامات وقتاً فوقتاً ہونے چاہئے ۔انہوں نے زور دیا کہ اس تقریب کے دوران پروان چڑھنے والے اتحاد اور افہام و تفہیم کے جذبے کو آگے بڑھائیںاورمل کر بلوچستان کو ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن کرسکتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اسلام سمیت تمام مذہب انسانیت کی بلارنگ و نسل خدمت اور امن و امان اور بھائی چارے کے قیام کا درس دیتے ہیں ہمیں چاہئے کہ ملک کر ملک میں قیام امن کیلئے اپنا کردارادا کریں ۔بلوچستان رورل سپورٹ پروگرام (بی آر ایس پی) کے سی ای او ڈاکٹر طاہر رشید نے حاضرین کو خوش آمدید کہتے ہوئے مختلف اسٹیک ہولڈرز بشمول سرکاری اداروں، پی پی اے ایف جیسی ڈونر تنظیموں، مذہبی رہنماﺅں، سول سوسائٹی اور میڈیا کی افہام و تفہیم اور اتحاد کے فروغ کیلئے مشترکہ کوششوں پر روشنی ڈالی۔ ڈاکٹر رشید نے معزز مہمانوں کی شرکت پر شکریہ ادا کیا اور امن اور ہمدردی کو فروغ دیتے ہوئے ثقافتی اور مذہبی اختلافات کو ختم کرنے کے مقصد پر زور دیا۔پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) کے سی ای او نادر گل نے تعلیم کے فروغ، انتہا پسند نظریات کا مقابلہ کرنے اور سماجی انصاف اور مساوات کی وکالت کرنے میں مذہبی اسکالرز کے کردار پر روشنی ڈالی۔نادر گل بڑیچ نے قائد اعظم محمد علی جناح کے ایک ایسے پاکستان کے وژن کا اعادہ کیا جو مذہبی آزادی اور تمام مذاہب کے درمیان اتحاد کا احترام کرے۔ نادرگل بڑیچ نے بین المذاہب ہم آہنگی اور سماجی ہم آہنگی کو فروغ دینے میں پیغام پاکستان کے کلیدی کردار،بین المذاہب ہم آہنگی اور سماجی ہم آہنگی کو فروغ دینے کی ثقافتی اور ثقافتی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔پرورش میں باہمی احترام اور افہام و تفہیم کی اہمیت پر زور دیا جو اپنے تنوع کی قدر کرتا ہے۔ انہوں نے بین المذاہب ہم آہنگی کو فروغ دینے اور رواداری اور شمولیت کے ماحول کو فروغ دینے میں اس طرح کے اجتماعات کے مثبت اثرات پر روشنی ڈالی۔بشپ خالد رحمت نے تنوع اور سماجی تکثیریت کا جشن منانے کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے پاکستان کی شاندار ثقافتی تاریخ کو اپنانے میں اتحاد کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ ضروری ہے کہ ہم متنوع ثقافتوں اور روایات کی قدر کریں اور ان کا جشن منائیں جو ہماری قوم کے تانے بانے میں کردار ادا کرتی ہیں۔ انہوں نے حکومتی تعاون کی اہمیت کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی مربوط کوششوں کے ذریعے ہی ہم حقیقی معنوں میں ایک ایسے معاشرے کی تعمیر کر سکتے ہیں جہاں ہر فرد کی قدر اور احترام کیا جائے۔تقریب سے بشپ خالد رحمت،قاری عبدالرشید ،ڈاکٹر آنند کماربھاٹیانے کہا کہ تمام مذاہب میں روزے مشترک ہیں اسلام میں 30،عیسائی مذہب میں 40اور ہندو مذہب میں 27روزے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ساری آسمانی کتابوں کا نزول رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں ہوا ہے اور تمام مذہب انسانیت کے احترام ¾محبت اوربھائی چارے کا درس دیتے ہیں ہمیں چاہئے کہ معاشرے تشدد اور دہشت گردی کے خاتمے اور امن و بھائی چارے کے فروغ میں اپنا کردارادا کریں

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.