Mashriq Newspaper

بلوچستان حکومت نے کانگو وائرس کے حوالے سے 12 اضلاع کو خطرناک قرار دیدیا

لورالائی۔ صوبے کے12 اضلاع میں کانگو وائرس کا خطرہ زیادہ ہے جن میں لورالائی، موسی خیل، بارکھان،کوہلو،قلعہ سیف اللہ،خاران،کوہلو،پشین،قلعہ عبداللہ،پنجگور شامل ہیں اور ان ہائی رسک اضلاع میں کانگو وائرس سے بچا¶ کیلئے اسپرے کیلئے مختلف ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں اس سلسلے میں سیکرٹری لائیو سٹاک میر طیب لہڑی، ڈائریکٹر جنرل لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ بلوچستان ڈاکٹرغلام رسول تاج کی خصوصی ہدایت پر اور کمشنر لورالائی ڈویژن بلاچ عزیز اور ڈپٹی کمشنر لورالائی سجاد اسلم بلوچ کی خصوصی دلچسپی اور نگرانی میں محکمہ لائیو سٹاک لورالائی کی طرف سے میری سربراہی میں ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر لورالائی کے مختلف علاقوں میں جاکر کر مالداروں کے مال مویشیوں اور ڈیری فارموں میں جا کر کانگو وائرس سے بچا¶ کیلئے اسپرے کر رہی ہیں یہ باتیں ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو سٹاک لورالائی ڈاکٹر عبدالرحیم نیازی نے بطور ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو سٹاک لورالائی کا چارج سنبھلنے کے فوری بعد مویشی منڈی میں کانگو وائرس سپرے مہم کی نگرانی کے دوران سینئر صحافی میاں محمد طاہر بشیر آرائیں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقعے پر ڈاکٹر سردار نعمت حمزہ زئی،ڈاکٹر باری ناصر،ڈاکٹرسید اسفند یارشاہ،ڈاکٹر انعام،ڈاکٹر ہمایوں بزداراور لائیو سٹاک کا دیگر عملہ بھی موجود تھا۔ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو سٹاک لورالائی ڈاکٹر عبدالرحیم نیازی نے کہا کہ لورالائی شہر کے تمام داخلی خارجی راستوں پر محکمہ لائیو سٹاک کا عملہ تعینات ہے جو مویشیوں کے معائنے اور اسپرے کے بعد ان کو شہر میں داخلے کی اجازت دے رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ جانوروں کے علاج معالجے میں کوئی کمی نہ ہواور ساتھ ساتھ مالداروں کو بھی کسی قسم کی پریشانی اور مشکل کا سامنا نہ کرنا پڑے اور ان کو مکمل ریلیف فراہم کیا جائے اس سلسلے میں محکمہ لائیو سٹاک لورالائی کا تمام عملہ مالداروں کی خدمت پیش پیش ہے۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.