Mashriq Newspaper

بلوچستان بھرمیں انتخابی نتائج کے خلاف سیاسی جماعتوں کا احتجاج چوتھے روز بھی جاری رہا

کوئٹہ(سٹی رپورٹر)بلوچستان بھرمیں انتخابی نتائج کے خلاف سیاسی جماعتوں کا احتجاج چوتھے روز بھی جاری رہا ، قومی شاہراہیں بند ٹرینوں کی آمد ورفت میں خلل کی وجہ سے مسافر اور مال بردار گاڑیاں پھنسی ہوئی ہیں الیکشن کمیشن نے 5حلقوں پر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے احکامات جاری کر دئیے الیکشن کمیشن نے بلوچستان کی16 قومی اور51 صوبائی جنرل نشستوں پر مکمل نتائج جاری کر دئیے ، نتائج کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی 11 صوبائی جنرل نشستیں جیت کر سرفہرست ہے جمیعت علما اسلام اورپاکستان مسلم لیگ ( ن)نے 10 10 نشستیں اپنے نام کیں تاہم سیاسی جماعتوں کی جانب سے نتائج کو مستردکر دیا گیا ہے ،نتائج کے خلاف کوئٹہ کے علاقے سریاب روڈ ڈی سی آفس کے باہر نیشنل پارٹی ، بی این پی ، پشتونخوامیپ ، پیپلزپارٹی ، جے یوآئی کا احتجاجی دھرنا دیا ، ہزارہ ڈیمو کریٹک پارٹی نے پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا ، کوئٹہ کے علاوہ مستونگ،چمن ، چاغی ، دالبندین ، لورالائی،نصیرآباد ،جعفر آباد ، صحبت پور ، قلات، نوشکی ، قلعہ عبداللہ ، خاران ، سبی میں مختلف ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفسران کے دفاتر اور قومی شاہراہوں پر احتجاج جاری ہے،سیاسی جماعتوں نے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا مطالبہ کیا ہے احتجاج کے باعث کوئٹہ کا دیگر صوبوں سے زمینی رابطہ منقطع ہے ، کوئٹہ چمن ٹرین سروس بھی متاثر ہے ، بڑی تعداد میں مسافر ، مال بردار گاڑیاں قومی شاہراہوں پر پھنسی ہوئی ہیں ، انہوں نے حکومت سے صورتحال کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے کیونکہ قومی شاہراہوں کی بندیش اور دھرنوں کی وجہ سے ٹرانسپورٹروں اور عوام کو آمد و رفت میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ حکومت اور دیگر انتظامیہ کو عوامی مشکلات کو مد نظر رکھتے ہوئے قومی شاہراہوں کی بندیش کا نوٹس لیتے ہوئے بند شاہراہوں کو آمد و رفتکیلئے کھلوانا چاہیئے تاکہ لوگوں کی مشکلات دور ہوسکیں۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.