Mashriq Newspaper

ایران: جیل میں قید نوبل انعام یافتہ انسانی حقوق کی کارکن کو نئی سزا کا سامنا

ایرانی عدالت نے 2023 کی نوبل انعام یافتہ انسانی حقوق کی کارکن نرگس محمدی کو سلاخوں کے پیچھے سے پروپیگنڈا کرنے کے الزام پر اضافی ایک سال سے زائد قید کی سزا سنا دی ہے۔

نرگس محمدی کے اہل خانہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا ہے کہ ریوولیوشنری عدالت نے ان کو ایک مقدمے کی سماعت کے بعد 15 ماہ اضافی قید کی سزا سنائی ہے، اس سماعت کا نرگس محمدی نے بائیکاٹ کیا تھا۔

ان پر 2 سال تہران سے باہر جلاوطنی میں گزارنے کے حکم سمیت دو سال کی سفری پابندی اور اسمارٹ فون کے استعمال پر بھی پابندی ہوگی، یہ پابندیاں نرگس محمدی کی رہائی کے بعد نافذ العمل ہوں گی۔

ان کے اہل خانہ نے کہا ہے کہ مارچ 2021 سے یہ نرگس محمدی کی پانچویں سزا ہے، ان کی سزاؤں میں اب 12 سال اور تین ماہ قید، 154 کوڑے، دو سال کی جلاوطنی اور مختلف سماجی اور سیاسی پابندیاں شامل ہیں۔

خاندان نے سیاسی بیان سے مشابہت رکھنے والے فیصلے کی مذمت کی ہے جس میں ان پر الزامات لگائے گئے ہیں کہ وہ بار بار عوامی اور انفرادی رائے کی حوصلہ افزائی کرتی ہیں جو اسلامی حکومت کے خلاف ہوتے ہیں تاکہ افراتفری اور انتشار کا بیج بویا جاسکے۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.