Mashriq Newspaper

فلسطین کے حق میں نعرہ لگانے پر شیما کرمانی کو برطانوی ہائی کمیشن کے پروگرام سے باہر نکال دیا گیا

پاکستان کی معروف اور پہلی خاتون کتھک ڈانسر، سماجی کارکن اور کلچرل ایکشن گروپ تحریک نسواں کی بانی شیما کرمانی کو غزہ کے حق میں نعرہ لگانے پر کراچی میں قائم برطانوی ڈپٹی ہائی کمیشن میں منعقدہ ایک پروگرام سے نکال دیا گیا۔

شیما کرمانی کا کہنا تھا کہ یہ تقریب 17 نومبر کو کنگ چارلس سوم کی سالگرہ کی مناسبت سے منعقد کی گئی تھی جہاں دیگر فنکاروں، سیاست دان، ارکان پارلیمنٹ، بیوروکریٹس اور دیگر حکام بھی شریک تھے۔

انہوں نے ڈان کو بتایا کہ پروگرام کے دوران تقاریر اور سالگرہ کی مبارک باد دینے کے دوران انہوں نے ’سیز فائر‘ کا نعرہ لگایا۔

انہوں نے بتایا کہ ’نعرہ لگانے کے بعد سیکیورٹی اہلکار میرے قریب آئے اور مجھے زبردستی باہر نکالنے کی کوشش کی، میں چونکہ خود باہر جارہی تھی اس وقت میں نے سیکیورٹی اہلکاروں سے کہا کہ ’مجھے ہاتھ مت لگائیں‘۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ’تقریب میں موجود تمام لوگ برطانوی حکومت اور شاہی خاندان کو مبارک باد دے رہے تھے، غزہ میں ہونے والے مظالم پر کوئی بات نہیں ہوئی، مجھے وہی کرنا تھا جو میں نے وہاں کیا، میں خاموش نہیں رہ سکتی۔‘

شیما کرمانی نے کہا کہ ’ افسوس کی بات ہے کہ جب سیکیورٹی اہلکار مجھے زبردستی باہر پھینک رہے تھے اس وقت دیگر مہمان مجھے صرف دیکھ رہے تھے، تقریب میں موجود ایک شخص نے آگے بڑھ کر میرا ساتھ نہیں دیا۔ ’

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.