Mashriq Newspaper

پی ڈی ایم سے وابستہ اراکین پارلیمنٹ کے منصوبوں کیلئے ترقیاتی فنڈز کی غیرمنصفانہ تقسیم

سرکاری اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ پائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول کے پروگرام (ایس اے پی) کے تحت ارکان پارلیمنٹ کے صوابدیدی اخراجات مالی سال کے ابتدائی 4 ماہ کے دوران کُل وفاقی ترقیاتی اخراجات کے ایک تہائی حصے سے زیادہ رہے۔

ترقیاتی پروگرام کے تحت ارکانِ پارلیمنٹ (جن کے صوابدیدی فنڈز کو سیاسی حمایت حاصل کرنے کا ذریعہ سمجھا جاتا ہے) کی اسکیموں کے لیے غیر متناسب فنڈنگ اگست میں حکومت کی تبدیلی کے باوجود جاری رہی، اس سے بالخصوص انتخابی سال کے دوران وسائل کی منصفانہ تقسیم کے حوالے سے تحفظات پیدا ہوتے ہیں۔

پچھلی اسمبلی میں اراکین پارلیمنٹ کی اکثریت کا تعلق پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) سے تھا، اس لیے ترقیاتی پروگرام کے اخراجات اُن کے منصوبوں کے لیے وقف ہوتے دکھائی دیتے ہیں۔

یہ لگاتار تیسرا سال ہو گا جب ملک میں انفرااسٹرکچر کی بہتری کے منصوبے بھاری کٹوتیوں کی وجہ سے محدود رہیں گے جو پہلے ہی ناکافی فنڈنگ کا شکار ہیں، حتیٰ کہ پارلیمنٹ کی طرف سے مختص فنڈز میں بھی کٹوتیاں کی جائیں گی، گزشتہ برس سیلاب کی وجہ سے ترقیاتی پروگرام متاثر ہوا تھا۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.