Mashriq Newspaper

سائفر کیس: عمران خان اور شاہ محمود کی جج سے شدید تلخ کلامی، فائل ہوا میں اچھال دی

سائفر کیس میں عمران خان اور شاہ محمود قریشی کی وکالت کے لیے سرکاری وکلا کو مقرر کردیا گیا، اس پر شاہ محمود نے غصے میں فائل ہوا میں اچھال دی، عمران خان برہم ہوئے کہ جج صاحب یہ کیا مذاق ہے! جن وکلا پر ہمیں اعتماد ہی نہیں اب کیا وہ ہماری نمائندگی کریں گے۔

سائفر کیس کی اڈیالہ جیل میں سماعت ہوئی جو کہ آفیشل سیکرٹ ایکٹ عدالت کے جج ابوالحسنات محمد ذولقرنین کے روبرو ہوئی۔ بانی تحریک انصاف عمران خان کے وکلا کی عدم موجودگی کے باعث سائفر کیس میں گواہوں کے بیانات پر جرح شروع نہ ہوسکی۔ عدالت کے احکامات پر سرکار کی طرف سے مقرر کردہ سرکاری وکلا بھی پیش ہوئے۔ سرکاری وکیل ایڈووکیٹ عبد الرحمن عمران خان کی طرف سے اور  حضرت یونس، شاہ محمود قریشی کی طرف سے پیش ہوئے۔

عمران خان اور شاہ محمود قریشی نے سرکاری وکلائے صفائی پر عدم اعتماد کا اظہار کردیا۔ جج ابو الحسنات محمد ذوالقرنین اور عمران خان کے درمیان شدید تلخ کلامی ہوئی۔ شاہ محمود قریشی نے بھی غصے کا اظہار کرتے ہوئے سرکاری وکیل صفائی کی دی گئی کیس کی فائل ہوا میں اچھال دی۔

عمران خان نے کہا کہ جن وکلا پر ہمیں اعتماد ہی نہیں وہ کیا ہماری نمائندگی کریں گے جج صاحب یہ کیا مذاق چل رہا ہے؟ میں تین ماہ سے کہہ رہا ہوں کہ سماعت سے پہلے مجھے وکلا سے ملنے کی اجازت دی جائے، بارہا درخواست کے باوجود وکلا سے مشاورت نہیں کرنے دی جاتی مشاورت نہیں کرنے دی جائے گی تو کیس کیسے چلے گا۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.