Mashriq Newspaper

ملکی وے کہکشاں کے بیچوں بیچ ستارہ ساز خطے سے متعلق انکشافات سے بھرپور تصویر

 امریکی خلائی ادارے ناسا کی جیمز ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ نے ملکی وے کہکشاں کے مرکز سے متعلقہ آج سے پہلے کبھی سامنے نہ آنے والی تفصیلات افشا کردیں۔

ٹیلی اسکوپ کی جانب سے پیش کی جانے والی حیران کن تصویر میں کہکشاں کے بیچوں بیچ 5 لاکھ سے زائد ستارے اور منتشر بادل دیکھ جاسکتے ہیں۔

ماہرینِ فلکیات اس خطے کے متعلق کافی عرصے سے جانتے ہیں لیکن یہ نئی تصویر اس خطے کے شدید ماحول کے پُراسرار رازوں سے پردہ اٹھا سکتی ہے۔ ان میں سے ایک راز ستارہ ساز خطے سیگیٹیریس سی کا ابھی تک بڑے بڑے ستارے پیدا کرنے کے متعلق ہے۔

 

مشاہدہ کرنے والی ٹیم کے مرکزی انویسٹی گیٹر سیمیول کرو (جو شیرلٹس ول میں قائم یونیورسٹی آف ورجینیا کے انڈر گریجویٹ طالب علم ہیں) کا کہنا تھا کہ اس خطے کے حوالے سے اس ریزولوشن اور حساسیت کے ساتھ جو ڈیٹا ویب سے حاصل ہوا ہے اس سے پہلے حاصل نہیں ہوا تھا۔ اس لیے ہم بہت سی خصوصیات پہلی بار دیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جیمز ویب نے اس تصویر میں بڑی تفصیلات کو افشا کیا ہے جس سے محققین اس قابل ہوئے کہ اس خطے میں مخصوص ماحول کے باوجود ستارہ سازی کے عمل کا مطالعہ کیا جاسکے جو پہلے ممکن نہیں تھا۔

یہ تصویر جیمز ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ میں نصب این آئی آر کیم (نیئر انفرا ریڈ کیمرا) استعمال کرتے ہوئے بنائی گئی ہے۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.